عمران خان کے دور میں ادارے خواہشات کے تابع نہیں،قانون کے تابع ہیں

نیا پاکستان ایسا نہیں ہے کہ ایک کو سزا ملے اور دوسرا مزے لوٹتا رہے،فردوس عاشق اعوان

لاہور ۔ :   احتساب کی چکی تیز ہو چکی ہے اور ایک کے بعد ایک ہائی پروفائل شخصیت نیب یا ایف آئی اے کی گرفت میں آنے کو ہے۔احتساب کا سلسلہ ٹاپ لیڈر شپ سے شروع ہوا ہے اورآہستہ آہستہ نیچے کی طرف آناشروع ہو چکا ہے۔عمران خان کے قوم کے ساتھ کیے گئے وعدوں میں سے ایک سابق حکمرانوں کے احتساب کے خلاف جہاد کا بھی تھا۔باقی وعدوں کو چھوڑ کر اگر اسی احتساب کے وعدے کی بات کی جائے تو وزیراعظم عمران خان اس پر سولہ آنے صحیح اترتے ہیں کیونکہ انہوں نے کسی کوبھی معافی نہیں دی۔
جس پر بھی نیب میں کیس تھا وہ گرفتار ہو چکا یا پھر گرفتار ہونے کو ہے۔اس سلسلے میں عمران خان نے پارٹی کے اندر سے اور باہر سے کہیں سے بھی آنے والی سفارش مان کر احتساب پر سمجھوتہ کرنے کا سوچا ہی نہیں اور اپنی دھن میں لگا ہوا ہے۔گزشتہ روز بھی سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو نیب نے گرفتار کیا جس پر اپوزیشن نے خوب واویلا مچایااسی موضوع پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ یہ نیا پاکستان ہے اور یہاں ادارے خواہشات کے تابع نہیں ہیں۔
نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری پر رد عمل میں فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عمران خان نے اداروں کو آزاد اور مضبوط کیا، قانون کی نظر میں سب برابر ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت میں کسی نے اختیارات کا غلط استعمال یاکرپشن کی ہو تو ضرور گرفتاری ہونی چاہیے۔۔یہ نیا پاکستان ہے، یہاں ادارے خواہشات کے تابع نہیں ہیں، قانون کے تابع ہیں۔
معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ ہم اداروں کو مضبوط اور بااختیار بنانا چاہتے ہیں۔اس لیے کسی بھی چور اورو کرپٹ کو کسی قسم کی کوئی رعایت نہیں ملے گی۔نئے پاکستان میں ایسابالکل نہیں ہو گا کہ ایک کو سزا ملے اور دوسرا مزے لوٹتا رہے اب وہ سارے لوگ گرفت میں آئیں گے جنہوں نے ملک و قوم کا پیسا لوٹا ہوا ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 19 جولائی 2019

Share On Whatsapp