مولانا فضل الرحمان نے وزیراعظم کے امریکا میں سفارت خانے میں قیام کرنے کے اعلان پر اعتراض اٹھا دیا

عمران خان کا پاکستانی سفارت خانے میں قیام کا اعلان ایک معمہ ہے، کیا وہ کسی جرم میں ملوث ہے اور خوف کا شکار ہے: جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ

لاہور : مولانا فضل الرحمان نے وزیراعظم کے امریکا میں سفارت خانے میں قیام کرنے کے اعلان پر اعتراض اٹھا دیا، جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ کا کہنا ہے کہ عمران خان کا پاکستانی سفارت خانے میں قیام کا اعلان ایک معمہ ہے، کیا وہ کسی جرم میں ملوث ہے اور خوف کا شکار ہے۔ تفصیلات کے مطابق جمیعت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کے دورہ امریکا پر اعتراض اٹھایا گیا ہے۔
مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کو دورہ امریکا کے دوران پاکستانی سفارت خانے میں قیام کرنے کی کیا ضرورت ہے؟ عمران خان کا پاکستانی سفارت خانے میں قیام کا اعلان ایک معمہ ہے۔ کیا عمران کان کسی جرم میں ملوث ہے اور خوف کا شکار ہے جس کی وجہ سے وہ سفارت خانے میں قیام کریں گے؟ واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان 21 جولائی کو 3 روزہ دورے کیلئے امریکا جائیں گے۔
وزیراعظم عمران خان اپنے دورے کے دوران پاکستانی سفارت خانے میں قیام کریں گے۔ وزیراعظم عمران خان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی دعوت پر امریکا جا رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے اعلان کر رکھا ہے کہ وہ کسی عالیشان ہوٹل کی بجائے امریکا کے دارالحکومت واشنگٹن میں قائم پاکستانی سفارت خانے میں ہی قیام کریں گے۔ وزیراعظم عمران خان نے سفارت خانے میں قیام کا فیصلہ سرکاری خزانے کا فالتو خرچ بچانے کیلئے کیا ہے۔
تاہم وزیراعظم عمران خان کے اس فیصلے پر امریکا کی جانب سے بھی اعتراض کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ سفارت خانے میں قیام کے باعث سیکورٹی خدشات جنم لے سکتے ہیں۔
                                                                                                                                      
 

تاریخ اشاعت : جمعہ 12 جولائی 2019

Share On Whatsapp