کرپشن کی روک تھام یقینی بنانے میں آڈیٹر جنرل پاکستان کا کردار اہمیت کا حامل ہے، گورنر سندھ عمران اسماعیل

کراچی ۔ : گورنر سندھ عمران اسماعیل سے آڈیٹر جنرل پاکستان جاوید جہانگیر نے اپنے وفد کے ہمراہ گورنر ہائوس میں ملاقات کی۔ جاری اعلامیہ کے مطابق وفد میں اکائونٹینٹ جنرل سندھ غفران میمن، ڈپٹی آڈیٹر جنرل سائوتھ (کراچی) شیخ عبدالحفیظ، ڈی جی آڈیٹر سندھ فتح محمد قریشی، ڈی جی آڈیٹر (لوکل کونسل) سندھ جاوید ضیا برنی اور دیگر شامل تھے۔ ملاقات میں جاری منصوبوں ، سرکاری اداروں کے مالی انتظام ، سرکاری ملازمین کو سہولیات کی فراہمی سمیت اہمیت کے حامل دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔
گورنر سندھ نے کہا کہ سرکاری اداروں اور منصوبوں میں شفافیت برقرار رکھنے کے لئے آڈٹ کا موثر انتظام انتہائی ناگزیر ہے، عوامی فنڈ ز کے ضیاع اور خرابیوں کی نشاندہی سے کرپشن پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ گورنر سندھ نے مزید کہا کہ قومی معیشت کے استحکام کے لئے فنڈز کا بہترین استعمال اور نگرانی وقت کی اہم ضرورت ہے، اس ضمن میں آڈیٹر جنرل آف پاکستان کا کردار نہایت اہمیت کا حامل ہے۔
انہوں نے کہا کہ ادارہ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور ریٹائرڈ ملازمین کی پینشن اور دیگر واجبات کے نظام کی کمپیوٹرائزیشن احسن اقدام ہے۔ گورنرسندھ نے مزید کہا کہ آڈٹ کے دوران سامنے آنے والی بے قاعدگیوں کی نشاندہی کر کے اداروں کی کارکردگی کو مزید موثر بنایا جاسکتاہے، عوامی فنڈز کی جانچ پڑتال کے کام کے لئے اداروں کا موثر کردار اس کی اہمیت کو مزید فوقیت فراہم کرتا ہے۔
عمران اسماعیل نے کہا کہ آڈٹ افسران کو اپنے شعبہ میں ہونے والی تبدیلیوں اور پیش رفت کے بارے میں مسلسل آگاہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ صوبہ میں ترقیاتی منصوبے جاری ہیں جبکہ وفاق کے تعاون سے بھی میگا پروجیکٹس پر کا م تکمیل کے آخری مراحل میں ہے، عوامی ترقیاتی منصوبے کی افادیت کے ساتھ ساتھ فنڈز کا درست سمت میں استعمال بھی حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔
انہوں نے کہا کہ سرکاری ادارے حکومت کا بازوہوتے ہیں ان کے استعمال کے لئے قوانین وضح کئے گئے ہیں، ذمہ داریوں کے تعین کا بھی واضح انتظام ہے، عوامی فنڈز کے استعمال کے لئے ادارے متحرک کردار ادا کر رہے ہیں ۔ ملاقات میں آڈیٹر جنرل پاکستان جاوید جہانگیر نے گورنر سندھ کو بتایا کہ آڈیٹر جنرل پاکستان کے کردار کو مزید بااختیار اور موثر بنانے کے لئے جلد سمری وزیر اعظم کی منظوری کے لئے کیبنٹ ڈویژن کو ارسال کی جائے گی۔
گورنر سندھ عمران اسماعیل نے مزید بتایا کہ گزشتہ برس صوبہ پنجاب اور دیگر صوبوں میں سیمینار منعقد کروائے اور اسی سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے رواں سال کراچی میں آڈٹ اور اکائونٹی بلیٹی کے عنوان سے سیمینار منعقد کیا جائے گا۔ اس موقع پر اے جی سندھ غفران میمن نے بتایا کہ صوبہ سندھ وہ واحد صوبہ ہے جہاں 100 فیصد پینشنرز کو کمپیوٹرائزڈ طریقہ سے ادائیگی کی جا رہی ہے۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 12 جولائی 2019

Share On Whatsapp