اسلام آباد ہائی کورٹ نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کے لئے وزارت قانون کو خط لکھ دیا

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کے لئے وزارت قانون کو خط لکھ دیا ہے۔ جمعہ کو عدالت عالیہ کے قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق کے حکم پر رجسٹرار نے یہ خط وزارت قانون کو بجھوایا ہے۔ ترجمان اسلام آباد ہائی کورٹ کے مطابق جج ارشد ملک نے اسلام آباد ہائیکورٹ کو اپنی صفائی میں خط لکھا اور بیان حلفی بھی جمع کرایا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ انہیں بلاوجہ بدنام کیا جا رہا ہے۔
جج احتساب عدالت محمد ارشد ملک کی جانب سے وڈیو کے حوالے سے الزامات کی تردید کی گئی ہے۔ جج ارشد ملک نے اتوار کو جاری کی گئی پریس ریلیز بھی خط کے ساتھ منسلک کی ہے۔ ترجمان اسلام آباد ہائی کورٹ کے مطابق جج ارشد ملک کا خط قائم مقام چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کو موصول ہوا جو انہوں نے رجسٹرار ہائیکورٹ کو مل کر ان کے حوالے کیا۔ رجسٹرارارشاد کیا نی نے قائم مقام چیف جسٹس ہائیکورٹ عامر فاروق سے ملاقات کر کے جج ارشد ملک کے خط اور بیان حلفی کے حوالے سے انہیں آگاہ کیا۔ خط کا جائزہ لینے کے بعد مناسب حکم جاری کیا گیا۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 12 جولائی 2019

Share On Whatsapp