”اگر روٹی کی قیمت میں اضافہ ہوا تو عوام کی جانب سے ہنگامہ آرائی ہو گی‘

سینئر تجزیہ کار کے مطابق حکومت نان بائی ایسوسی ایشن کی جانب سے روٹی کی قیمتوں میں اضافہ نہیں ہونے دے گی

اسلام آباد : سینیئر صحافی و تجزیہ کار ہارون الرشید نے کہا ہے کہ نان بائی ایسوسی ایشن کی جانب سے اگرچہ روٹی اور نان کی قیمتوں میں بے پناہ اضافے کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ تاہم روٹی مہنگی نہیں ہو گی۔ اگر قیمتوں میں کوئی اضافہ ہوا ہے تو وہ بھی واپس ہو جائے گا۔ اگر مہنگی ہوئی تو 2 ، 4 روپے ہی مہنگی ہو گی۔ کیونکہ روٹی کی قیمت میں اضافہ ایسا معاملہ ہے جس پر شہریوں کی جانب سے ہنگامہ آرائی بھی ہو سکتی ہے۔
اس سے بڑی تباہی ہو سکتی ہے۔ میرا خیال ہے کہ اس کا ایک آدھ دِن میں فیصلہ ہو جائے گا۔ میاں اسلم اقبال نے بھی یہی کہا ہے کہ روٹی کی قیمت میں اضافہ نہیں ہوگا۔ اسلم اقبال ایک ذمہ دار آدمی ہے۔ کہ چاہے سبسڈی دینی پڑے ، دی جائے گی۔ ن لیگ کے دور میں بھی سستی روٹی کا پراجیکٹ شروع ہوا تھا۔ واضح رہے کہ نان بائی ایسوسی ایشن کے آج منعقدہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ آٹے کی قیمتوں میں بے پناہ اضافے کے بعد تندور پر ملنے والی سادہ روٹی، نان اور خمیری روٹی کی قیمتوں میں بھی اضافہ کیا جا رہا ہے۔
نان بائی ایسوسی ایشن کے مطابق سادہ روٹی کی قیمت 7 روپے سے بڑھا کر 15 روپے کی جا رہی ہے جبکہ نان کی قیمت 12 روپے کی بجائے 20 روپے ہو گی۔ اسی طرح خمیری روٹی کی قیمت بھی 12روپے کی بجائے 20 روپے ہو گی۔ قیمتوں میں اضافے کا اطلاق سوموار کے دِن سے ہو گا۔ واضح رہے کہ چند ہفتوں کے دوران تندور پر ملنے والی نان اور روٹی کی قیمتوں میں یہ دُوسری بار اضافہ کیا جا رہا ہے۔
بجٹ کا اعلان ہونے کے بعد جب آٹے اور میدے کی قیمتیں بڑھیں تو نان بائی ایسوسی ایشن نے بھی روٹی کی قیمت 6 روپے سے بڑھا کر 7 روپے کر دی تھی اور نان و خمیری روٹی کی قیمت 10 روپے سے بڑھا کر 12 روپے کر دی گئی تھی۔ نان بائیوں کا کہنا ہے کہ ہم مہنگے داموں آٹے کی بوری خرید کر کم قیمت میں لوگوں کو نہیں بیچ سکتے۔ کیونکہ گیس کے بِلوں کی مد میں بھی حکومت کی جانب سے خوفناک اضافہ کر دیا گیا ہے۔ جس کے باعث ہمارا گزارہ نہیں ہو پاتا۔ اگر ہم کم قیمت میں روٹی بیچیں گے تو ہمارے اپنے گھروں میں بھُوک ناچنے لگے گی۔ اس لیے ہم قیمتوں میں ایک بار پھر اضافہ کرنے میں مجبور ہو گئے ہیں۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 12 جولائی 2019

Share On Whatsapp