بوڑھے شخص نے جوان بیوی کو گھر کے صحن میں دفن کر دیا

48 سالہ شخص نے20 سالہ بیوی کو تشدد کر کے گھر کے صحن میں زندہ دفن کیا، ڈیڑھ سالہ بچے کو بھی لاوارث قبرستان میں چھوڑ آیا

خانیوال : : بوڑھے شوہر نے نوجوان بیوی کو گھر کے صحن میں دفن کر دیا،میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ 20 سالہ لڑکی اپنے 48 سالہ خاوند کی وحشت کا شکار ہو گئی۔شوہر نے بیوی کو تشدد کر کے گھر کے صحن میں زندہ دفن کر دیا اور اپنے ڈیڑھ سالہ بچے کو لاوارث قبرستان میں چھوڑ دیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حبیب قمر نے اپنے سے آدھی عمر کی دوسری بیوی کو گھر کے صحن میں دفن کیا۔
مقتولہ کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ ان کا کئی روز سے اپنی بیٹی سے رابطہ نہیں ہو رہا تھا۔اچانک اس کے شوہر کی کال آئی اور اس نے کہا کہ ہماری بیٹی کو قتل کر کے لاش صحن میں دفنا دی ہے۔اہل خانہ کی اطلاع پر پولیس نے صحن کی کھدائی کر کے لاش نکال کر اسپتال منتقل کی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم اپنی دوسری بیوی پر تشدد بھی کرتا تھا۔پولیس ملزم کی تلاش میں چھاپے بھی مار رہی ہے۔
جب کہ دوسری جانب لڑکی کے بھائی نے ایڈیشنل سیشن جج میاں چنوں ضلع خانیوال کو درخواست دی جس میں کہا کہ اسکی ہمشیرہ مسمات خورشید بانو جسکی شادی پل 59 پندرہ ایل کے رہائشی حبیب قمر ولد شفیع قوم جٹ نامی شخص ہوئی ہے مورخہ 4 جون 2019 کومیں اپنی ہمشیرہ کو ملنے اور عید دینے آیا تو میری ہمشیرہ اور میر ا بھانجا احمر حبیب تقریبا 2سال کوغائب پایا جب ملزم حبیب قمر جٹ سے پوچھ گچھ کی گئی تو وہ صاف انکاری ہو گیا۔
مجھے دھمکیاں دے کا گھر سے نکال دیا جس پر عدالت نے کاروائی کرتے ہوئے حبیب قمر جٹ کے خلاف زیر دفعہ 364 ت پ اغوا کا مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا۔ اور خاتون کو بچے سمیت برآمد کرنے کی ڈائریکشن بھی دی۔ تھانہ چھب کلاں کے ایس ایچ او ہارون الہی اور مقدمہ کے تفتیشی چوہدری محمد اصغر نے دن رات محنت کی پولیس کو مورخہ 21جون کی شام کو خبر ملی کہ تھانہ صدر میاں چنوںکی حدود قبرستان بابا حیدر شاہ سے ایک کار بچہ چھوڑ کر فرار ہوگئی۔
بچے کے بارے میں جانکاری لی گئی تو پتہ چلا کہ وہ بچہ ملزم حبیب قمر جٹ کا ہے جیسے وہ خود چھوڑ کر گیا ہے۔ مورخہ 22جون کوملزم نے مقتولہ کے بھائی اور رشتے داروں کو فون کر کے کہا کہ میں نے اپنی بیوی کو قتل کر کے گھر میں دفنا دیا ہے اگر میرے خلاف کوئی کارراوائی کی تو تمہیں بھی اسی طرح دفنا دوں گا۔

تاریخ اشاعت : منگل 25 جون 2019

Share On Whatsapp