عالمی بینک نے پاکستان کے محصولات میں اضافے کے دو منصوبوں کے لئے 51 کروڑ 80 لاکھ ڈالر کے پیکج کی منظوری دیدی

اسلام آباد : عالمی بینک نے پاکستان کے محصولات میں اضافے کے دو منصوبوں کے لئے 51 کروڑ 80 لاکھ ڈالر کے پیکج کی منظوری دیدی۔ پیکج کے تحت 40 کروڑ ڈالر فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے مقامی ٹیکسوں سے حاصل ہونے والی آمدنی میں پائیدار اضافے کے منصوبے کے لئے جبکہ 11 کروڑ 80 لاکھ ڈالر خیبرپختونخوا میں محصولات اکٹھے کرنے اور پبلک ریسورس مینجمنٹ پراجیکٹ کے لئے مختص ہوں گے۔
عالمی بینک کے ایک اعلامیہ کے مطابق ان منصوبوں سے پاکستان میں ٹیکس کا نظام سادہ بنانے اور ٹیکس کسٹمز کے انتظام کو مضبوط بنانے میں مدد ملے گی۔ اس سلسلے میں ٹیکنالوجی، ڈیجیٹل انفراسٹرکچر اور ٹیکنیکل مہارتوں کے ساتھ معاونت فراہم کی جائے گی۔ پراجیکٹ کے ٹاسک ٹیم لیڈر محمد وحید نے اس حوالے سے کہا کہ منصوبے کا ہدف جی ڈی پی میں ٹیکس کی شرح کو مالی سال 2023-24ء تک 17 فیصد تک بڑھانا ہے جبکہ ٹیکس نیٹ کو 12 لاکھ سے بڑھا کر 35 لاکھ فعال ٹیکس دہندگان تک وسعت دینا ہے۔
عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر نے اس حوالے سے کہا کہ محصولات کو بروئے کار لاتے ہوئے ملک کی مالیاتی گنجائش بڑھائی جا سکتی ہے تاکہ بجٹ خسارہ میں کمی لائی جا سکے۔ خیبرپختونخوا حکومت کی محصولات وصولی اور سرکاری وسائل کے انتظام کے منصوبہ پر عملدرآمد سے صوبے کی محصولات وصولی کی استعداد بڑھے گی اور صوبے کے وسائل کے بہتر انتظام میں مدد ملے گی۔

تاریخ اشاعت : جمعہ 14 جون 2019

Share On Whatsapp