This Pakistani Meme Legend Was Found In Pak VS Aus Match

قومی ٹیم کی شکست پر افسوس کرنےوالا یہ شخص کون ہے؟ جانئے

ٹیم کی مایوس کن فیلڈنگ دیکھ کر بہت افسردہ ہوا:محمد اختر

ٹانٹن : ورلڈکپ 2019 ءکے ایک اہم میچ میں پاکستانی ٹیم آسٹریلیا کےخلاف 307 رنز کے ہدف کے تعاقب میں 266 رنز پر آﺅٹ ہوئی، قومی ٹیم کی اس شکست پر سوشل میڈیا پر پاکستانی ٹیم کے مداحوں نے اپنے افسوس کا اظہار کیالیکن اس موقع پر میچ کے دوران لی گئی ایک تصویر جنگل میں لگی آگ کی طرح سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی۔یہ تصویر ٹانٹن میں پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان کھیلے جانےوالے اسی میچ سے لی گئی تھی جس میں پاکستانی ٹیم کا ایک مداح ٹیم کی مایوس کن کارکردگی پر اپنے افسوس کا اظہار کررہا ہے۔
اس تصویر کو سوشل میڈیا پر صارفین نے طرح طرح کی میمز بنا کر شیئر کیا۔ایک صارف نے انہیں مین آف دی میچ قرار دےدیا،
ایک اور کے مطابق یہ پاکستانی ٹیم کے سپورٹرز کا مستقل چہرہ ہے۔
ایک صارف کا کہنا تھا کہ ’جب کوئی کہتا ہے 1992ءمیں بھی یہی ہوا تھا تو ان کا یہی انداز ہوتا ہے،
ایک اورانہوں نے لکھا ’جب کوئی یہ کہے کہ اگلا میچ دیکھیں گے‘۔
ان کے مطابق ’جب بڑے 10 روپے عیدی دیتے ہیں‘۔
سوشل میڈیا صارفین میں یہ جاننے کا تجسس بھی سامنے آیا کہ آخر یہ تصویر ہے کس کی؟۔
یہ تصویر لندن سے تعلق رکھنے والے محمد اختر کی ہے جو اپنے دوستوں کے ہمراہ یہ میچ دیکھنے آئے تھے۔محمد اختر نے آئی سی سی کو دیے ایک انٹرویو میں سوشل میڈیا پر خود پر بننے والی میمز کے حوالے سے بتایا کہ وہ 3 گھنٹے کا سفر طے کرکے میچ دیکھنے آئے تھے تاہم ٹیم کی مایوس کن فیلڈنگ دیکھ کر وہ کافی افسردہ ہوئے جس پر انہوں نے اپنے افسوس کا اظہار کیا۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ آصف علی کے ہاتھوں نہایت آسان کیچ چھوٹنے پر وہ حیران اور افسردہ ہوئے، تاہم انہوں نے آصف علی کو کچھ نہیں کہا کیوں کہ وہ حال ہی میں ایک سانحے کا شکار ہوئے ہیں۔محمد اختر نے میچ کے دوران محمد عامر کی کارکردگی کو خوب سراہا۔واضح رہے کہ ورلڈ کپ میں پاکستان کا اگلا میچ 16 جون کو روایتی حریف بھارت سے ہے۔ 

تاریخ اشاعت : جمعرات 13 جون 2019

Share On Whatsapp