وڈیو گیم کھیلنے کی لت با ضابطہ طور پر ایک بیماری ہے، عالمی ادارہ صحت

جنیوا : عالمی ادارہ صحت نے وڈیو گیم کھیلنے کی لت سے پیدا ہونے والے مسائل جنہیں’ گیمنگ ڈِس آرڈر‘ کہا جاتا ہے، کو با ضابطہ طور پر ایک بیماری تسلیم کر لیا ہے۔ادارے کے ارکان نے گزشتہ روز جنیوا میں منعقدہ اپنی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران بیماریوں کی بین الاقوامی درجہ بندی میں ترمیم کی منظوری دی۔انہوں نے گیمنگ ڈِس آرڈر کو طبی اہمیت کی حامل کیفیتوں کی فہرست میں شامل کر دیا ہے جو نجی زندگی میں سنگین نتائج کا سبب بن سکتی ہیں۔
گیمنگ ڈِس آرڈر میں انٹرنیٹ، کمپیوٹر، سمارٹ فون یا الیکٹرانک آلات پر کھیلی جانے والے گیموں کے دوران مریض گیم کھیلنے کی تعداد، دورانیے اور وقت پر قابو رکھنے میں بے بس ہو جاتے ہیں۔ انٹرنیٹ اور سمارٹ فون کے بڑھتے ہوئے رجحان سے دنیا بھر میں خطرناک حد تک گیموں کو کھیلنے کے ایسے واقعات میں اضافہ ہو رہا ہے جس سیان افراد کی روزمرہ کی زندگی اور صحت متاثر ہوتی ہے۔ماہرین کو امید ہے کہ عالمی ادارہ صحت کے فیصلے سے دنیا بھر میں گیموں کو کھیلنے کے حوالے سے تحقیق میں اضافہ ہو گا اور اصلیت سامنے آ سکے گی۔

تاریخ اشاعت : منگل 28 مئی 2019

Share On Whatsapp