بی جے پی رہنما کے بالاکوٹ حملے پر تازہ بیان نے بھارت میں نیا تنازع کھڑا کر دیا

بالاکوٹ حملے کا مقصد کوئی جانی نقصان کرنا نہیں بلکہ پاکستان کوبتانا تھا کہ آپ کے سیکورٹی انتظامات کے باوجود بھی ہم آپ کو تباہ کر سکتے ہیں،وزیراعظم سمیت کسی پارٹی ترجمان نے بالاکوٹ حملے میں 300 افراد ہلاک ہونے کا دعویٰ نہیں کیا

نئی دہلی : : بھارتی جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رکن پارلیمان ایس ایس آہلووالیہ کے نئے بیان نے بھارت میں ایک نیا تنازع کھڑا کر دیا ہے۔ان کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ بھارتی ایئر فورس کی طرف سے جیش محمد کیمپ پر ہونے والے فضائی حملے کا مقصد ہلاکتیں نہیں بلکہ اس کا مقصد پاکستان کو پیغام دینا تھا۔فضائی حملے کا مقصد پاکستان کو یہ واضح پیغام دینا تھا کہ ہم آپ کے گھر کے قریب جا سکتے ہیں اور آپ کو تباہ بھی کر سکتے ہیں۔
ہم انسانی جانوں کا نقصان نہیں چاہتے تھے بلکہ ہم پاکستان کو یہ بتانا تھا کہ آپ کے سیکورٹی انتظامات کی باجود بھی ہم آپ پر حملہ کر سکتے ہیں۔یہ بیان دارجیلنگ کے حلقے سے بی جے پی کے رکن ایس ایس آہلووالیہ نے کہی۔انہوں نے مزید کہا کہ میں قومی اور بین الاقوامی میڈیا دیکھا اور وزیراعظم نریندر مودی کی ائیر اسٹرائیک کے بعد پہلی تقریر بھی سنی۔
نہ ہی وزیراعظم نریندر مودی اور نہ ہی پارٹی کے کسی ترجمان نے یہ دعوی کیا ہے کہ بالاکوٹ حملے میں 300 افراد ہلاک ہوئے ہیں.واضح رہے بھارتی سرکار کا پاکستان میں سرجیکل اسٹرائیکس ٹو کا دعویٰ عالمی سطح پر مودی سرکار کی نہ صرف جگ ہنسائی کا باعث بن رہا ہے بلکہ اس سے مودی سرکار کی عالمی سطح پر تذلیل کا نہ تھمنے والا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے۔
میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ برطانوی خبر ایجنسی کے مطابق بھارت نے جس جگہ مدرسے پر حملے کا دعویٰ کیا وہ عمارت اب بھی موجود ہے۔ خبر ایجنسی نے سیٹلائٹ تصویر کی مدد سے سارے ڈرامے سے پردہ ہٹا دیا۔اس سے قبل بالاکوٹ میں 300 سے زائددہشتگردوں کی ہلاکتوں اور دہشتگردوں کے ٹھکانوں کو تباہ کرنے کے بھارتی دعوے پرامریکہ نے بھی جھوٹ کی مہر ثبت کی تھی۔
امریکی تھنک ٹینک نے بھارت سیٹلائٹ ویڈیو کی مدد سے بھارت کا جھوٹ بے نقاب کیا۔ بھارتی حکومت نے سپائس 2000 بم گرانے کا دعویٰ کیا تھا۔ لیکن امریکی تھنک ٹینک اور محقق مائیکل شیلڈن نے بھارتی دعوے کی دھجیاں اُڑا دیں۔ مائیکل شیلڈن نے کہا کہ بھارت نے سپائس 2000 بم گرانے کا دعویٰ کیا تھا لیکن سپائس 2000 میں ایک ہزار کلو بارودی مواد ہوتا ہے۔ سپائس بم سے بڑے پیمانے پر تباہی ہوتی ہے۔ لیکن سیٹلائٹ میں ایسی کسی تباہیکے آثار نہیں ملے۔ سیٹلائٹ میں کسی تربیتی مرکز کو اُڑانے کے شواہد بھی نہیں ملے۔

تاریخ اشاعت : بدھ 6 مارچ 2019

Share On Whatsapp