Massage Card Distributors Could Be Deported This Year: Dubai Municipality

مساج کارڈ تقسیم کرنے والوں کو رواں سال ریاست سے خارج کیا جا سکتا ہے ، دبئی میونسپلٹی

دبئی : دبئی میں خواتین کی برہنہ تصاویر پر مشتمل مساج کارڈ کی تقسیم کارجحان دن بدن بڑھتا جا رہا ہے ۔ گزشتہ سال دبئی میونسپلٹی نے 6 سے 7 ہزار مساج کارڈ تقسیم کرنے والے افراد کو گرفتار کیا تھا جبکہ 2018 میں انکی تعداد 10،000تک جا پہنچی ہے ۔ اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے دبئی میونسپلٹی نے امیگریشن ڈیپارٹمنٹ اور ٹیلی کام ڈیپارٹمنٹ کے ساتھ ملاقاتیں شروع کر دیں ہیں تاکہ مساج کارڈ تقسیم کرنے والے ان افراد کو ملک بدر کیا جاسکے ۔
فی الوقت مساج کارڈ تقسیم والوں کے لیے صرف 500 درہم جرمانےکی سزا متعین ہے۔ دبئی میونسپلٹی نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ 500 درہم جرمانے کی سزا نہ کافی ہے کیونکہ مساج کارڈ تقسیم کرنے کے واقعات میں دن بدن اضافہ ہو رہا ہے۔ اس لیے دبئی میونسپلٹی امیگریشن ڈیپارٹمنٹ کی مدد سے 2018 کے اختتام تک ان افراد کو ملک بدر کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔ دبئی میونسپلٹی ڈیپارٹمنٹ کے ڈرایکٹر نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ مساج کارڈ تقسیم کرنے والوں میں زیادہ تر غیر ملکی ہیں جو کہ ریاست میں ویزٹ ویزہ پر آتے ہیں ۔ لہذا انکو ملک بدر کرنے سے باقی کے غیر ملکیوں کوایک سخت پیغام جائے گا جس سے مزید ایسے واقعات پیش آنے میں کمی لائی جا سکے گی ۔

تاریخ اشاعت : ہفتہ 31 مارچ 2018

Share On Whatsapp